Thursday, December 1, 2016

KHAWAJA UMER FAROOQ

'میں نے موت کو دیکھا اور میں لگ بھگ مرچکی ہوں'

شام کے شہر حلب میں حکومتی فورسز اور باغیوں کے درمیان جاری جھڑپوں کا احوال اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر بیان کرنے والی 7 سالہ بچی بانا ال عبید بمباری کے نتیجے میں اپنے گھر سے بھی محروم ہو گئی اور ماں کے ساتھ گلیوں میں بھٹک رہی ہے۔ یہ بچی اور اس کی ماں باغیوں کے زیرقبضہ حلب کے مشرقی حصے میں پھنسے ہوئے ہیں۔ ٹوئٹر پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے اس سات سالہ بچی نے بتایا کہ ہم ابھی تک حلب کے مشرقی حصے میں پھنسے ہوئے ہیں ' ہم ابھی تک اندر ہیں اور یہاں سے بھاگ نہیں سکتے، اگر ہم حکومتی حصے کی جانب جائیں گے تو وہ ہمیں قتل کردیں گے، ہمیں قتل کی متعدد دھمکیاں مل چکی ہیں، ہم بس اکھٹے رہ کر انتظار کررہے ہیں'۔
اس سے قبل اس بچی نے ٹوئٹر پر اپنے تباہ شدہ گھر کے ملبے کی تصویر ٹوئٹر پر شیئر کی تھی۔ اسی طرح اتوار کی رات اس نے ٹوئیٹ کیا ' آج رات ہمارا کوئی گھر نہیں رہا، اس پر بمبار ہوئی اور ہم اب ملبے میں ہیں، میں نے موت کو دیکھا اور میں لگ بھگ مرچکی ہوں'۔ یہ ننھی بچی اپنے شہر کی تباہ حالی، اپنے خوف اور زندگی کا احوال اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ کے ذریعے شیئر کرتی ہے جہاں اس کے فالورز کی تعداد 99 ہزار کے قریب ہے۔  شام میں صدر بشار الاسد اور ان کے مخالفین کے درمیان لگ بھگ چھ سال سے جاری ہے جس کے نتیجے میں لاکھوں افراد ہلاک اور لاکھوں ہی اپنے گھروں کو چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں۔

گزشتہ چند ہفتوں کے تعطل کے بعد دوبارہ فضائی حملوں کا سلسلہ شروع ہوا جس نے حلب کے اس مشرقی حصے کو تباہ کر دیا ہے جبکہ وہاں کے رہائشیوں کو خوراک، ادویات اور ایندھن کی قلت کا سامنا ہے۔ بانا کا ٹوئٹر اکاﺅنٹ اس کی والدہ سنبھالتی ہیں جس میں شہر کی بمباری کی شکار عمارات اور گھر مں اس بچی کی مصروفیات کو دکھایا جاتا ہے۔

Read More
KHAWAJA UMER FAROOQ

سپریم کورٹ میں پاناما لیکس کی سماعت

پاناما لیکس کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے ریمارکس دیئے ہیں کہ پاناما لیکس پر میڈیا ذمے داری کا مظاہرہ کرے۔ وزیراعظم نوازشریف ، ان کے بچوں کے خلاف منی لانڈرنگ، ٹیکس چوری کے الزامات اور پاناما لیکس میں سامنے آنے والی معلومات کی تحقیقات سے متعلق درخواستوں کی سماعت چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ کررہا ہے۔ حامد خان کے کیس لڑنے سے انکار کے بعد تحریک انصاف کی نئی لیگل ٹیم عدالت میں پیش ہوئی۔
دوران سماعت عمران خان کے وکیل نعیم بخاری نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نوازشریف کےصاحبزادے کا این ٹی این ہی نہیں ہے،مریم نواز وزیر اعظم کی زیر کفالت ہیں اور وہ لندن فلیٹس کی بینی فشل اونر ہیں، وزیر اعظم کو یہ بات گوشواروں میں پیش کرنی چاہئے تھی ۔ ان کا کہنا تھا کہ قطری شہزادے کا خط وزیر اعظم کے موقف سے مختلف ہے، نیب اور دیگر ادارے اپنا کام کرنے میں ناکام رہے، نیب وزیر اعظم کو بچانے میں لگا رہا، نیب چیئرمین کے خلاف آرٹیکل 209 کے تحت کارروائی کی جائے،اسحاق ڈار نے منی لانڈرنگ کیس میں اعترافی بیان دیا۔
نعیم بخاری نے گزشتہ سماعت پر ہونے والی تلخ کلامی پر معافی طلب کی اور کہا کہ انہیں اس عدالت پر مکمل یقین ہے۔ طارق اسد ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ میڈیا میں حامد خان سے متعلق بہت باتیں آئی ہیں،تبصروں سے کیس پر اثر پڑے گا، میڈیا کو کیس پر تبصروں سے روکا جائے۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ حامد خان بہت سینئر اور اہل قانون دان ہیں، قانون پرکتب لکھ چکے ہیں، حامد خان سے متعلق میڈیا میں باتوں سے ان کے قد کاٹھ پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا کہ پاناما لیکس پر میڈیا ذمے داری کا مظاہرہ کرے۔ دوران سماعت جماعت اسلامی کے وکیل اسد منظور بٹ نےدرخواست کی کہ عدالت فریقین کو حکم دے، وہ کیس کو مختصر کریں ۔









Read More

Wednesday, November 30, 2016

KHAWAJA UMER FAROOQ

رمیش کمار نے پاکستانی پارلیمینٹرینز کے لیے مشکل کھڑی کر دی

انصار عباسی


Read More
KHAWAJA UMER FAROOQ

اسرئیلی ٹی وی کی نشریات ہیک : اذان نشر کر دی گئی


Read More