Header Ads

Breaking News
recent

پاکستان خلیجی ملکوں کے معاملے پر غیر جانبدار رہے گا

قطر اور سعودی عرب کے اتحادیوں میں جاری کشیدگی سے پیدا ہونے والی صورت حال پر پاکستان کی قومی اسمبلی نے ایک متفقہ قرار داد میں اسلامی ممالک کو صبر سے کام لینے اور باہمی تنازعات کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ انتہائی احتیاط سے لکھی گئی اس مختصر سی قرار داد میں حکومت کو اسلامی ممالک کے درمیان پیدا ہونے والے اختلافات کو دور کرنے کے لیے ٹھوس اقدامات کرنے کو کہا گیا۔ اس قرار داد کو جسے وفاقی وزیرِ قانون زاہد حامد نے ایوان میں پیش کیا اس میں دس اپریل سنہ دو ہزار پندرہ کی ایک متقفہ قرار داد کا ذکر بھی کیا گیا جس میں حکومت کو عرب اور خلیجی ملکوں کے درمیان تنازعات میں مکمل طور پر غیر جانبدارانہ موقف اختیار کرنے کی بات کی گئی تھی۔ اس قرار داد پر بحث کے دوران حزب اختلاف کے ارکان نے پاکستان کو غیر جانبدار رہنے کی ضرورت پر زور دیا۔  

واضح رہے کہ سپیکر قومی اسمبلی نے قومی سلامتی سے متعلق پارلیمنٹ کی مشترکہ کمیٹی کا اجلاس 15 جون کو طلب کر ر کھا ہے۔ اس اجلاس کے ایجنڈے میں قطر اور عرب ملکوں کے درمیان تناو کے معاملے کو بھی زیر بحث لایا جائے گا۔ دوسری جانب دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے ہفتہ وار بریفنگ میں کہا کہ پاکستان کی کوشش ہے کہ موجودہ صورتحال کا بہتر حل نکل آئے۔ دفتر خارجہ کے ترجمان نے خلیجی ممالک کے مابین جاری کشیدگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان امت مسلمہ کے اتحاد پر یقین رکھتا ہے۔

اُنھوں نے پاکستان پر دورے پر آئے ہوئے سات رکنی وفد کے بارے میں لاعلمی کا اظہار کیا جبکہ حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ اس وفد نے جس کی قیادت امیر قطر کے خصوصی ایلچی عبدالہادی مناالحاجری کر رہے تھے وزیراعظم سے ملاقات کی ہے اور یہ ملاقات وزیر اعظم کے قازقستان کے دورے پر جانے سے پہلے ہوئی تھی۔ اس ملاقات میں ملاقات میں قطر سعودی عرب کشیدگی پر بات چیت ہوئی جبکہ قطری وفد نے پاکستان سے مصالحتی کردار ادا کرنے کی درخواست کی ہے۔
 

No comments:

Powered by Blogger.