Header Ads

Breaking News
recent

ماضی کی یادوں کے ساتھ نوکیا 3310 کی واپسی

موبائل فون بنانے والی کمپنی نوکیا کا پرانا فون 3310 جو کسی وقت کافی مقبول ہوا کرتا تھا ایک بار پھر سے سمارٹ فون کے اس زمانے میں عوام کے لیے بازار میں آ گیا ہے۔ پہلی بار یہ فون سنہ 2000 میں بازار میں آیا تھا اور اپنی ابتدا کے تقریبا 17 برس بعد یہ فون پھر سے بازار میں فروخت ہونے لگا ہے۔ یہ فون دو میگا پکسل کیمرہ کے ساتھ ساتھ ڈھائی جی کنیکٹیوٹی نظام سے بھی لیس ہے جس کی مدد سے محدود پیمانے پر انٹرنیٹ کا استعمال بھی کیا جا سکتا ہے۔ برطانیہ میں اس فون کی قیمت تقریبا 50 برطانوی پاؤنڈ یعنی تقریباً 6800 روپے کے آس پاس ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ اس فون کی بیٹری بہت مضبوط ہے اور اس کی مدد سے 22 گھنٹے تک بات کی جا سکتی ہے جبکہ فون استعمال نہ کرنے کی صورت میں تقریبا ایک ماہ تک بیٹری چل سکتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ فون کی کامیابی کا دارو مدار اس بات پر کہ لوگ اس فون کے لیے کتنا پیسہ خرچ کرنے کو تیار ہیں جو دراصل ماضی کی یادوں سے وابستہ ہے۔ ٹیکنالوجی کنسلٹینٹ کمپنی سی سی ایس سے وابستہ بین وڈ کا کہنا ہے: 'میرے جیسے شخص کے لیے یہ بہت ہی دلچسپ دن ہے۔ لیکن اگر آپ اسے کسی ایسے نوجوان کے ہاتھ میں دیں جو سنیپ چیٹ کا عادی ہو تو ظاہر ہے اس کے لیے یہ بالکل بیکار فون ہوگا۔' بین کا مزید کہنا تھا: 'برطانیہ میں 20 لاکھ سے زیادہ فون استعمال ہوتے ہیں جن میں سے تقریبا 10 لاکھ فیچر فون، یا اگر آپ کہنا چاہیں، تو انھیں احمق قسم کے فون کہہ سکتے ہیں۔ تو اب بھی اس کا اچھا خاصہ بازار ہے۔ یہ بالکل ابتدائی ورژن کا فون ہے اور اب سوال یہ ہے کہ اس کے لیے لوگ کتنی حد تک رقم خرچ کر سکتے ہیں۔'

برطانیہ میں بہت سے افراد نے اسے پہلے ہی دن خریدنے کے بعد اپنی تصویریں سوشل میڈیا پر پوسٹ کی ہیں اور پرانا فون دوبارہ پانے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔
جبکہ بعض افراد کا کہنا ہے کہ سمارٹ فون کے اس دور میں انھیں نوکیا 3310 کی کیا ضرورت ہے۔ ووڈا فون کے ایک ترجمان نے بی بی سی سے بات چیت میں کہا: 'ہمیں اس بات کی خوشی ہے کہ ہم اس فون کو جمع کر رہے ہیں کیونکہ اس کی مانگ حقیقی طور پر بہت زیادہ ہے۔' نوکیا نے فروری میں بارسلونا میں ہونے والی موبائل ورلڈ کانگریس ٹیکنالوجی کے شو میں اپنے پرانے ماڈل 3310 کو از سرے نو لانچ کرنے کا اعلان کیا تھا۔ سنہ 2000 اور 2005 کے دوران نوکیا کا فون 3310 کافی مقبول ہوا تھا اور اس دوران کمپنی نے سوا کروڑ سے بھی زیادہ اس فون کو بنایا تھا۔ لیکن آہستہ آہستہ اس کا دور ختم ہو گیا اور اس کی جگہ سمارٹ فون نے لے لی۔
 

No comments:

Powered by Blogger.