Header Ads

Breaking News
recent

اسرائیلی جیل سے 12 فلسطینی سالہ بچی رہا

اسرائیل نے 12 سالہ فلسطینی بچی دیما الواوی کو تقریباً دو ماہ بعد جیل سے رہا کردیا گیا۔ انہیں اسکول کا یونیفارم پہنے 9 فروری کو مقبوضہ مغربی کنارے سے چاقو کے ساتھ یہودی آبادی والے علاقے سے گرفتار کیا گیا تھا۔
خبر رساں ادارے اے ایف پی کے فوٹوگرافر کے مطابق واوی کو مغربی کنارے کے علاقے طولکرم کراسنگ پوائنٹ پر فلیسطینی حکام کے حوالے کردیا گیا ہے۔ انہیں رہائی کے بعد اپنے گھر والوں کے ساتھ ہیبرون میں واقع اپنے گھر سفر کرنا تھا۔
فلسطینیوں کی جانب سے چاقو کے حملوں یا مبینہ طور پر جان بوجھ کر کیے گئے گاڑی کے حادثات میں 28 اسرائیلی ہلاک ہوچکے ہیں۔
 تاہم اسی دورانیے میں 201 فلسطینی بھی مارے گئے جن پر حملہ کرنے کی کوشش کا الزام تھا۔ ان کے وکیل طارق برگھوت نے فیس بک پر ایک پوسٹ میں کہا کہ واوی کم عمر ترین فلسطینی ہیں جنہیں جیل بھیجا گیا۔ انہوں نے کہا کہ واوی کی دفاعی ٹیم نے اسرائیلی فوجی عدالت سے ان کی رہائی کی درخواست کی جسے قبول کرلیا گیا۔
اقوام متحدہ کی ایجنسی یونیسیف کے مطابق اسرائیلی فوجی قوانین کے تحت 12 سال کے بچے کو بھی سزا دی جاسکتی ہے ۔ اسرائیل کی جیلوں میں اس وقت 450 کم عمر افراد سزا کاٹ رہے ہیں جن میں سے 100 کے قریب 16 سال سے بھی کم 
عمر ہیں۔


No comments:

Powered by Blogger.